لوہا سونا بن گیا – ملفوظاتِ محبوبِ ذات

ایک مرتبہ حضور سرکارِ عالی قدس سرہٗ العزیز‘ حسن ابدال تشریف لے گئے۔ وہاں آپ کا ایک سکھ دوست مقیم تھا۔ جب اس نے اپنی برادری کے لوگوں میں حضور سرکارِ عالی قدس سرہٗ العزیز کا تعارف کروایا تو سینکڑوں لوگ دعا کے لیے آپ کے گرد جمع ہو گئے۔ آپ نے سب کی مشکل حل فرمائی۔ دعا سے سب مستفید ہوئے تو ایک غیر مسلم نے پوچھا کہ حضور‘ آپ کے فرمان کے مطابق قرآن میں سب کچھ ہے تو کیا لوہا سونا بن سکتا ہے؟ آپ نے اثبات میں اس کو جواب دیا۔ اس پر وہ لوہے کا ایک ٹکڑا اٹھا لایا۔ حضور سرکارِ عالی قدس سرہٗ العزیز نے توجہ دی اور فرمایا کہ سونا ہو جا۔ اس پر وہ لوہے کا ٹکڑا سونا بن گیا۔ اس موقع پر آپ کی کرامت دیکھ کر پانچ صد سکھوں نے اسلام قبول کر لیا۔

آپ کا تصرف اتنا وسیع و ارفع تھا کہ ہر مذہب و ملت کے لوگوں نے آپ کے دست ِ حق پر اسلام قبول کیا۔ شیعہ‘ سنی‘ قادیانی‘ عیسائی‘ ہندو‘ سکھ‘ اہلِ حدیث کے مسلک کے ہزاروں لوگ آپ کے حلقہ بگوش ہوئے۔

Advertisements
This entry was posted in ملفوظاتِ محبوبِ ذات, محبوبِ ذات and tagged , , , , , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink.

One Response to لوہا سونا بن گیا – ملفوظاتِ محبوبِ ذات

  1. muhammad ali نے کہا:

    subhan allah kia shan hai mere sohney mehrban ki allah pak ap ke darje martabey buland farmaye ameen

اپنی رائے نیچے بنے ڈبے میں درج کر کے ہم تک پہنچائیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s