بیعت کے بغیر مرنا جہالت کی موت – ملفوظاتِ محبوبِ ذات

 

يٰٓاَيُّھَا الَّذِيْنَ اٰمَنُوا اتَّقُوا اللّٰهَ وَابْتَغُوْٓا اِلَيْهِ الْوَسِيْلَةَ وَجَاهِدُوْا فِيْ سَبِيْلِهٖ لَعَلَّكُمْ تُفْلِحُوْنَ

ترجمہ۔    اے ایمان والو! اللہ سے ڈرو اور اس کی طرف وسیلہ ڈھونڈو اور اس کی راہ میں جہاد کرو تاکہ تم نجات پاؤ۔

(سورۃ المائدہ‘ آیت ۳۵)

تشریح:۔    بیعت کرنا بھی وسیلہ ڈھونڈنے کے ضمن میں ہے اور ایمان والوں میں مرد و خواتین دونوں شامل ہیں۔


وعن عبد الله بن عمر قال : سمعت رسول الله يقول : "من خلع يدا من طاعة لقي الله يوم القيامة ولا حجة له . ومن مات وليس في عنقه بيعة مات ميتة جاهلية”۔      رواه مسلم    (مشکٰوۃ)

فرمایا پیارے آقا و مولا نبی پاک ﷺ نے‘ جو عبد اللہ بن عمر رضی اللہ عنہما سے روایت ہے۔

ترجمہ۔    جو شخص مر گیا اور اس نے کسی بزرگ کی بیعت نہ کی‘ وہ جاہلیت کی موت مر گیا اور جس نے اپنے ہاتھ اللہ کی اطاعت سے اٹھائے‘ وہ قیامت کے دن اللہ تعالیٰ سے ملے گا تو کوئی نیکی اس کے پاس نہ ہو گی۔ اور جو شخص اس حال میں مرے کہ اس کی گردن امام کی بیعت (یعنی امام برحق کی اطاعت ) سے آزاد ہو (یعنی وہ امام برحق کا باغی ہو کر مارا جائے) تو اس کی موت جاہلیت پر مرنے کے مترادف ہوگی ۔ (مسلم)

(مشکوٰۃ شریف‘ جلد سوم‘ امارت وقضا کا بیان‘ حدیث نمبر ۳۶۲۲)

 

حدیث ِ مبارکہ:

من لم يدرك إمام زمانه فقد مات ميتة جاهلية.

جس شخص نے اپنے زمانہ کے امام کو ادراکِ قلبی سے نہ پہچانا وہ جہالت کی موت مر گیا۔

Advertisements
This entry was posted in ملفوظاتِ محبوبِ ذات, محبوبِ ذات and tagged , , , , , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink.

اپنی رائے نیچے بنے ڈبے میں درج کر کے ہم تک پہنچائیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s