حضرت امام علی الحق رحمۃ اللہ علیہ کے مزار پر چلہ کشی – ملفوظاتِ محبوبِ ذات

حضرت امام علی الحق رحمۃ اللہ علیہ کے مزار پر چلہ کشی

 

ایک دفعہ آپؒ چلہ کرنے کی نیت سے حضرت امام علی الحق رحمۃ اللہ علیہ کے دربار پر تشریف لے گئے۔ نمازِ مغرب کے بعد مجاوروں نے زائرین کو باہر نکال کر دربار کا دروازہ مقفل کرنے کے لئے آپ سرکار رحمۃ اللہ علیہ سے باہر آنے کی درخواست کی اور بتایا کہ امام صاحب کے دربار میں رات کے وقت قیام نہیں کیا جا سکتا، یہ ناممکنات میں سے ہے۔ آج تک کوئی شخص یہ جرأت نہیں کر سکا۔ آپ ایسا خطرہ مول نہ لیں۔ لیکن ان کے اصرار کے باوجود حضور سرکارِ عالی رات بھر دربار کے اندر ہی عبادت گزار رہے۔ اگلی صبح مجاوروں نے جب دروازہ کھولا تو آپ سرکار  کو معرفِ عبادت پایا اور حیرت سے پوچھا کہ امام صاحب نے آپ کو رات کیسے بسر کرنے دی؟ آپؒ نے فرمایا اہلِ رضا کسی کو کچھ نہیں کہتے۔ اس طرح آپؒ نے پورے چالیس دن دربار کے اندر بیٹھ کر چلّہ پورا کیا۔ چلّے کی تکمیل پر امام صاحبؒ نے ارشاد فرمایا کہ آپ مغرب کی جانب چلے جائیں۔ جس جگہ مغرب کی اذان ہو جائے‘ وہیں ٹھہر جائیں۔ نیز فرمایا اگلی منزل کے بارے میں ہم بعد میں بتائیں گے۔

Advertisements
This entry was posted in ملفوظاتِ محبوبِ ذات, محبوبِ ذات and tagged , , , , , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink.

اپنی رائے نیچے بنے ڈبے میں درج کر کے ہم تک پہنچائیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s